(061-4540513-4519240

ٹا نع

پول ارہ مت ان

مم

قب m~‏

ر

ھ*

tj N پل .٭‎ اده‎ 3 + . a 5 Oa 8 7 ی ر‎ o 3 مم ډه‎ ۹ ۳ ٠ - 2 YEE

ْ نر مم وچر برشا رن حر بیش کےعلوم ومعا e,‏ کی ین کو :بی فک کی فص ل اروش

از جا اتو لواحتو ل تقر ت علا مرا 6 اطظز ا ) تلمیذ شید : حض رت مولا مم راورلی سک ٹرعلوی مولا ن موی روعا یبا زک رما اشر

Z2DE امتاق الما محرت موا نا جرک صاحب رح الد‎ ال یٹ حضرتمول نانز با صاحب رج اللہ‎ نفرت علا فو ا بجر قطب ال ر ن دلو رح ال‎

او سی کے ےھ دار تايقاب اشرفيب . پول ار ست ان تان

. ]061-4544065131-6 86

N

مار اشاعت رھ کت

7

مم ا

گرم مم مس طیاتٹ

۲ ہیں

... رمان ا ارک ۱۲۲۹ھ 2 ادارہتالیغات اش نتان ...لام تا قال رسس متان

اا اکتا بک یکا بی را کے جملتقو کو ہیں مس یپھی یق سےا کی اشاع ت رتاو ہے > قأنون مشیر فصرا خان

( ایرو کیٹ لورت تان )

ادار وتا لفات اشر نیہ.... چوک اره...

ارارواہلاات مت سیدامشبید........اردبازار ملصرقاے........أردوپاڑار وا

119-121- HALLIWELL ROAD BOLTON BLI 3NÈ. (U.K.)

قارئین سے گذارش اوار وک ی الا مکا نل وش ٢ون‏ ےک وف ینگ مارگ ہو۔ ائمدلل ا سکا مکی ادار ہی علاءکی ایگ بماعت موچ ورک ہے پربھ یکو ی یتر سے برا مب بای ع فر اکریمنون فر میں

کا کنو اشا عت میں درست ہو کے چ ا اللد

70+70 7

لان ملتقشدے....... داجہ پازار ا رای لامور لو نیودت یک اکی..... تی ربازار کٹ پادر

ISLAMIC EDUCATIONAL TRUST U.K (ISLAMIC BOOKS CENTERE

فبرستکوانات 7 ہلیم

میا اب حزم المدةحرمها ال تعالى TEY E‏

کتاب الزكوة

ا

ا 7

ع 1

جر | باب صدقة الفطر

-1

لصد

3 7 ہب ۴ اگ

سک | ×× آپ سرت ی رقت بب ارہ بب سرام ٣|‏ اپ مت ا باسیی می اع

3 5 کا 2 >_

ي

| N 8 ات‎ cC $ E ج‎ 3

|5 ج ا ے 3 ٠‏

ب صيام التطو ع ٦‏ | باب الهدى ۱ باب الاجارہ ١‏

۲م

باب فضائل السور ۸ باب فى اختلاف القراء ة أ ۱۵۲| باب المحروم بجنب الصد | ۳۰۷ | باب الوصایا امم

4 ۰

ام

l4

حدیث الرسول

من روم اعارا محرت موا زا شر صا حب چالت رس رک رح الہ ٠‏ “رسال پڈائیش ایا یکت بج رہ ے چن ملو ےا صول صد ی اون بک کے مت رم ومر کی کیا سے ۲نظر بن کے انان دول تک خر سے مون ک ےم بای کے ماخ کا حالش الو بین ظا ہرکردیاے۔ ۳۔ دوطلہ جن نیکی ایتا کت کے بذ ھن کاارادو ر کے ہوں ا نکو سج رسالہپرایاوکراد ینا زعدمفیدثاہت ہوگا۔ ٠‏ سال ڑا غر س ایک فاری رسال اصول حر ےکا منظو حطر مور مفقی الیکش صا دب کا نرعلوی ترک وافادنلطل نگ نکی گیا سے ملف ٦‏ ابرضانالہا رک ماد

۱ بسم اللو الوْحمٰن الرجيم ۔ آلحمة لِلهِ و فى وَسَلامَ لی عِبَادہ الِّيْنْ اصطفى. اما بَعْذُ: م اسول ےٹک اصطدا شر طور پ ورک انی ڑیں ن تی ے تول

صواب شال مال رکوک رہ بت مین صد ٹکٹ یا یں ۔آ ین

اصولحد یک ضرف - م اصول صدیث 2 ےک کے زرلچ عد یٹ کے احوال علوم کے ہا یں _

| اھ لد بث گی مان‎ ١ علم اسول صد ی ک تات یر ےک رحد یت کے احوال معلوم‎ کر کے متبول کیا سے اور رمقبول سے چا جا سے ۔‎ . صول مد ٹک موصو‎ ۱ علماصول حد بی ثکا ہضور عد مث ے۔‎ . صضرت سول خا صلی ال علیہ دآ کم دحا ہکرام وت تین کے‎ ۱ تول ول وق ری( )اوعد کے ہی او ہی اروا کیک ہیں۔‎ تقر ول یہ ہ ےکی ملمان نے رو اکری مکی اللہ‎ (0 علیہ م کے ساس ےکوئ یکا مکیا ا پانے جا سن کے‎ پاوجھدا۔ ےک نف مایا بک تامو اختیا رف رما 27 پیٹ را رکھااودال‎ (iie ںا سک توب شیع را( کزان قدت م‎

تو

ا پر سے رمتو ات رواد ۱ رتوار :عد یٹ ےک کے روا تک نے والے پر زمانے ماس نکی رمو ں کان سب کے توت پاتقا کر لیے کو جم یال کے ۔ ۱ اورتروامر: عد یٹ ے* جس ےراوی! لر ندرک رٍہوں۔ پرا لف اقیاروں ےکم ہے۔

خبرداعدکی 7

اعد پے ای انار ےت ا ہے ہ(ا قوف مقطو

مو وو حدریث ےجس می ترت رول خد ای الہ علیہ وآ الم تلب ليتر یکاذکرہو-

اور موقوف وہ عدیث سے جس میں سی سے قول اہ 02 کاڈکرہو_ ٦‏ اورمتطوع وہ عد یی ہے جس میں جال کےقول ھل یا تق رکاذ رہوں

2 وا ن دوس 801

۱ ٹم روا درد روا اپار ے یم مین رج II‏ ب۔

ودی ےک راک زمانے می نین تک ہیں نہیں

۶اث ت راوگ زائ ین وو ےم

یں نال ریب دوحد یٹ ےت ںکاراوی ہیں تا ایک ہو۔ ټرواعدی ریشم

رواعدا سے راو ںکیاصفات کے اھا ر ےہول مم پرے۔

لاکن لز ضیف افر متناف ررضو مزر شا زہفوی کر مع روف تلل عط رپ مقلو بٴ٠‏ حف مدرع-

لد اج وەعدرےث ےس کک را وی ناد لکا الضہط ہوں اورا کی سد سل ہو محلل وشاؤ ہو نے ےون ہو_

ضس لد اتر وہ صدےثٹ ےجس کے راوی میں صرف ضط اق بوب سبش الد کےا میں مو جودہوں-

رشو« صریث ہے 22 کےراوی سمرت سن 4 شردپ ےجا

۱ E جاتا‎ ETT

سر حردمول۔

نر ۱ 0

وضور د صد یٹ ے* ۶ کروی صد یٹ بوق میں بھوٹ بو ا وج رمو ٤‏

ردک دو حدیث ہے بش کا راو یم بزب ہو یا دہ روات تو اع رمعو مرق الد بن کے تالف مو_ 7

ُا وہ رٹ سے مم کا راوگی ځور نہ ہوگر ایک ایی ا ع کر ہک تناف کرت ہوجوال ےز یاد لھ ہیں

فو و صد یٹ ہے جوشماذ کے متقائل ہہو۔ ۱

مر وہ عد يث سے ہہ کا رای باوجو ر شرف ET‏ سما عت شات تالف روا تک/رے۔

مر وف وہ عد یٹ ے جور کے متنا بل ہو

لل وہ حریٹ ہےجس می کوئی اک عل خی ہو جوک عد یٹ شںنقصان دب ہے۔ ا لکومعلو مکرن ازن ب یکا کا م سے ہن کا کا ہیں

ضر ب(احدیث ے' ےکی ا ات شاف ایی ل ایق نو سے

قاو ب ووعدیث ہے نس می ںکبھول ےن پا ست ر کے اندر سم وت 2 و ك موی موی لف مق کور خراورم امقر مکیاگیا ہو یا کول ار ایگ راوی کی جردو سرارا وی رکھاگیا م ۱ ملف (ا) وو حدریٹ ےجس ٹس باوج بضورت د٥ی‏ اق رن کے اقطوں بوت رکتڑں ذسونوں کےا کی بے تلف ادا ہوجائے۔

( اقا تک فار نیج یکپ ہیں۔ مقر ا

ددد عد یٹ ےش کی یداو اپنا کلام عکردے-

خمرداحدکی چوک م ر خر واحدرشقو ی وعدم شتو راوٹی کے انتا رسے سا تم ب نل یرمع عن ول برل من یسل دوحدیث ےا ا گی ست دشل راو پر یکرم ووعد یٹ ےکا کیت رول وای ا یلیل کنل ہوز

تع دہحدیٹ سےکردرک مزنٹل دہو رکوس دہع روک رواو

مل وم ری ے کد کے ٹر 2 ایک راو اکم رن

O راو گرا وا ہو یا ا کی سند میں ایک سے زان راوگ پٹے ب پے‎ ۱ ن‎

ع٤‏ تل دوحد یٹ ے سی ند کے خر ےکولی راوگ راہوا ہو

م نے ےنس کے راو اک یعادت 1وگروواہۓے 2

lt ÊLÊ

نرو اح دک یا نچو ینیم رای کا ےر ن ا تن ذوحدبیث ہے جم سکی سن یس لف تن ہواو را اوی

. تن پھ ہاہاتاے۔

کل یت 1 ات نت راولوں کےصفات باعالات ایک بی طط رر کے ہوں_ مین نی اواء: عر شی ن عد واد اکر ے وقت من رز ر5 اغات ے اکٹ ایک افظاستعا لک اکر تے ہیں مر ات کی انی مانب رن انانا رآ ت :قال ل غلاق »دک ی نلان مرو کی فا ق »تب لی فلا من فلان :قال فلاق»ذکرغظان »روک غلاق »کب فلان ‏ حَدثیی واخبرنی سرن تقذ ن کے ربک ہے دونو ل لفظظ رارف ہیں اورستا سن کے نزدیک بیفرقی ےک اکر استاد پٹ سے اور شاگرد نے ر یں تو 2 اکر ےتا r:‏ سورت می دی اور بہت ہو ے کیصورت

میس شا کہا جانا سے اور اکر شاگرد پڑ ھے اور استاوستا ر ےلو

ا اضر یس اش ری اور بت ہو ےکی صورت می اعم ا کہا جا تا ہے( ع7الاصول ) بان تتبحدیث ف ملف اتپاروں 2

مدیشک 04 2011 ال کے اخارے بہہیں۔ بائ کن ند مرد ریب ہمجخر جع محرد کان ہے جس می یر عقا رآ داب اکا متا قب بن رہفقنء علامات قیامت و تیر ہرشھم کے مات لک احاد یٹ تد رع ہوں کا a‏ ۱ ا مم داب فی وععقا کن احا م وش را طط ومنا قب : ےنارک وھک ٠‏ ۱ کن وتاب ی شاا مک احادبیٹ الوا ب فک تب موان بیان ہوں کے رن داش ن نا وش این باب سنہ و وکتاب سے جس میں سی ہکا مکی رحب کن یا تیب روف ھا یا نزم وجا خر اسللائی کے فاظ ے احاد یٹ ور مول یی من اجرومنددارئی- م و ملاب ہے جس کے انر وع احادیث ٹیل تر جیب انحوی رق بء وتاب ے ہیں بی صرف ایک ستل کی عاد یٹ ایک کک ELH PE‏ القرا

مرو ماب نس تم ف ایی کال روات دکوں۔ ّ

رپ و تاب ہے یس میس ایک حردث کے روات جو ماج سے میں دہ زک مول ۔( ۶ال اند( ٣ار‏ ف لع ی)

ر و تاب ہےئیس س دوسر یکنا بک د یڑ ںکی زائندسندو ںکاا حا مکی اگیا موچ ےر رح الگراد ۔

جھ جھ ہے

مرک و وناب ہے جس می دور یکا بک حرط کے

موا ا سکی ری ہو حد یو کو پور اکر دیا ر

E DI

۱ رف کب صد تبول ونی تبول ہو نے کے ۱ انقپارے پا ام ہیں۔ : کل ھی وش دش کی دو

اام اک ہج باک 6 ای جاعء ا تتا ناء

فی ہز نون اکن ہنی بن جرد

ھکد ایس یں جن ماما شن شی ہر نکی ہی رسب تاک ل اختیا رن مہی کیو ںکہان میس جوحدیشیں ٠‏ ضیف ہیں وہک یشن کےقریب ہیں۔ کی ےن ابو دائود جائح. ٠‏ ړک ہمغن امترات

ترک و وکا یں ہیں جن مشن :صاغ کر مدع میں ہیں ےن این پاچ سند طیا کی زیادات این ام بن بل من دعبدال رز اق من ر سعد بن مور مضع ال ی یکر بن ای شیب مند ابوت گنو ا ار مت ایی ھک یب ین ج راہن ج تار این عردو ی یران مر ووی رای اٹم

کی ہم سر قم او شعن انی فی بغرا وار کی عیام »

۱ شف ن تین رحب یا یمان ت _

پیم وتنایں میں جن مس سب میں شف ہیں إل اشاء الد بی نوادر لاصو ل کیم تر ری تار افلفظاءہ جار این مار صت الففردویس وی »تاب الضعفا یں کائل این عدیء جار خطیب بغفدادی ءا رچاء نع اکر_ :

کی دونائیں ہیں جن سے ضوح عدشیں ومون ہیں یی ے فوجمات اہن جو زک ضوحات ےت رطا ا وره (رساڑ فا جب لان ترم وآ حطر شاد و ل اشک ث دبل )

ا کا ں ستھ :سا ست ےکنا ہیں ہیں ۰

کی لم امع تر نی بشن نیا دن اود دجن این ماب

اوت مین نے این ا کی ہججاے مو طامام ماک اون نے من دودار کوشا کیا ہے اوران چ تابو ںکوسحا کہنا خلا ے یو ںک رای رس ئیاہیں۔( کر مق 7 الى )

مم اتس ”کا ست: پلا رتنیا ر یکا درا + کا تسا وواود چوتھانسا یکا۔ پا چوا تر نر یکا اام ما کا۔

زام با کا ب صا ست: ام تانر یں( کی رکٹ ف اواب )پا شاف طقات شاذ لزا صا ل١١۱‏ )

نام مل شی ہیں۔ (ایان ا یس ۹ ام الدداؤوکھلی ہیں (اس ۱۵یا شای قات شاف جلاتاص ۴۸) ما سال خآ ہیں (ام ےا نادان ھی شی یں( مرف اعد ی)

بر ولعر لک ان ن شین جب یراو یک وشن ول ییا نگ ے ہیں کئی ررح کے الف استتا لک کے ہیں

بیس یق میں اعلی میں ورت موس اوزلض ارام بھی 7 لفاظ ججر بھی : جرں ش سای ہیں اض متو اوک او ول سان سب الق ظا کوا لی سے ادل یک تک با تیر ذکرکیاجاتاے۔

الا ظا تحر مل :کت چ غیت ما وشن بجر ہت مت اید تہ ضندوق۔ لا ب ی یہ لیس ب با کی تہ انندتق۔ بد اللریث۔ ضا الت ۔ غ وس من کن ای یٹ ۔صدوق انٹاءالل غب ونم إ۔

الفماظ 2 :جال کذاب. وَضاع يَصْع الحیِیث. متهم بالکذذب. مُفق علیٰ ت رکه. متروک. لیس بثقة . سوا عنه. ذاهب الحدِیث. فيه نظر. هالک. ساقط. واه بِمَوٌق. ليس بشىء . ضيف جدا. صعفوة. ضیف واو ئضَقٌف. فيه ضعف. قد ضعَّف. لیس بالقوى. ليس

ن سى الحفظ. لله یحتج به. احتف فيه. صَدُوق لكنه.'

× مُبعَدِع وغيرها. (دماچیزان‌الاکقال ).

تر ولعر و اک اتر پام کر جرب وتخ د بل کم وہ سے جس سکول سبب جرح وتخ ر لکا

رای ٹل ڑکورےہو-_ ۱ رع تخد بل شر وہ ےجس می لکوئی بب جرب وہ یکا رای یش اورم

بو لیت وعدم تجو لیت جر وتخ ر یل

برح مفسرو تد ضروونوں پالاتھا ق مقبول یں _ الت چ .

مم وتر بل “م کےمقبول ہو نے کوش بز رگوں سے اختلاف قول ےگ رزیاد وڈ بی تول ےک جر “م پاک ل مقبو لیس اور تقد بل“ بول ےکی ہب امام بای ایام وت یداو داؤڈوسالی ‏ وابن ماو ہو ری رشن ہا نف گاے۔ . شر ماشو لیت جر وت ر لل جرح رواخ رہ لف ر کے تبون ہونے کے واس ہش ت شر وط یہ ہیں

EIT 7‏ 7 کے وز صد ب مر حجرو اباب ٠‏ رع وتو ر مل اور اص جر رح ف ر کے مقبول ہونے کے واس اکر رط یہ کہ جر ںکفندہ ریب ہونے لے کے لاو وک و مقر ری ر نرو نس اسا مم رن جورع میں تحصب ہیں رای نطیب بغراوی اسا مو رشن جج ں م حت ہیں

انی جوزیی حر من بد رمو وی ىمنا تری۔ جوزتا ملف کا بال اکل نان تتا داد ین !خو ملف امیں۔

مض اسا می رشن چ جر ں میں من ہیں ابوھاقم نای اب تمن ۔ائن قطان می قطان ۔این شان۔ بجر وع بل سو 7-

یک راد میس بجر وتر یی کے تھا رشک بظاہ رج رورس ہیں۔ جر تخد یل کہم جر “وتخ دی لر جرں رو تحر یی مجر عفر نتعد ی لر

کی اور ووسر صورت بیس جرح شی مت ر اور تقد بل حبر ہے ۔یسری اور وی صورت میں جرح ج راورتخ ربل خی مجر ج بی دو جرح ف ری خیش سے صادرتہولی 27 کر نے ب ۔ اشر و یاک شا رکیا اگیاے۔

فاده ا السرا اتلام متام 0 طف رمد اللہ تیل علیہ کے تلق جو ضکب ملین میں جرح . مقول ہے دہ پرگزمتیو لیس اس ل ےک صرت امام صاض بن کے

پارےمی پ شع مکی تحد یل قذا ین س سے ری جرح ہوکش

می نکی جرح مہم ہے اورت بارین خوو کیب مك دو ی یں اور اور ہزور ہوا س کہ ایک رب بمقاہلہ تعر یل ہگ ر یں ے(الرخخ وا فی ارب والتمد لن ) ام رمضان ابا رک۴٣٣۱‏ الجدالضعیف ج رش جالندرعری

یٹ کہ جن لوک نکی ہب سے عاد ہے دہ رشب کی اکر سے ہی کہ قشب لا اب سید شی عبدالقادر جیا یق سر الزہز نے فو اللا تین مم حننیکوفرت ضالہ می“ اتام می شا رکیاہے۔ ۱ جو اپ : ای کی جواب کے لے رسال ارح ایل موا یتضرت مولا غ پرا یکھنوئی کس ۲۵ سے ۲۸ کک ما حرف بنا کان ہوگا۔ الہت ابھائی جواب ہہ ےکہ حر کیامراوفرقفسامیے ہے .جم کابالی سان بن ابا نارن ( ہے جو )اصول س مر خا لکا مق تیا اورف رو می ل تر بت امام ا یف رمع الال اما کاادعامگر سے یکہلا تا تھا۔ چکگ وہ اور ای سے ین اوج انتا دار چا پاوجودائل سشت واا عت ہے ارب مو کے پھ ھی اقب فی ہو رک ار تے ےا لحرت جح“ ۱ نے امول اختلاف کے بیان می اس فرقہ ضال ہکا کہ ان کےمشہور لقب سے فر ایا چنا نکھت ں‌واما الحنفية فهم اصحاب ابی حنیفة النعمان بن ثابت زعموا ان الایمان هو المعرفة والاقرار باللہ ورسوله اہ _ ورن جو لوک الى ست ٠‏ داعت میں سے اصول وف روم میں کرت ادام انم اپ ونی ےی دمقلد ہیں ا نکو - خرت جن کیو ںک ربراک کک ہیں۔اس ےک اکرام وا رام سے دور ے امت پچ ی نکا نام ذکرکر سے ہیں اک کرام وا تر ام سے امام ابوحفی ا کا یکی وکر ر ماتے یں ۔ چنا نما زج رکے وت مم فرماتے ہیں:۔ وقال الامام ابو حنيفة الاسفار افضل نظ 2 یرش عفا ال عنہجالندھری

٣‏ ہمد گالارٰ۱۳۵۳د

کتاب الز کوۃ زک ة کیان ) کاب الصاو کے بح تاب الصوم ہونا چا ہے تھا اس ےک علو و کی بدرٹی عبات ہے اورصو می برف حیادت ےکن صاح ب کو کناب الصاو کے بح راب ال رکو کولا ے وراس ےک کاب الیل کے اند راکش تقابات زک ”رکو کا قربین بنا گیا ے۔ و اقیموا الصلوة واتوا ال زکوۃ۔

الفصل الاول عن ابنِ عباس أن سول الله صلی ال علیہ وسم بك مقاذالِی الم فَقَالَ الک تی قَوْمَا اهل کتاب فاذْغْهُمْ آل شهاك ن لاله ال الله امن رت الله فن هُم اَطَاغُوْا الک فَعلِمهُمْ ا الله ذ قرَضّ عَلَيهمْ حَمْسَ صَلَوَاتِ فی الوم وَالبلة فان هُمْ اطاغُوْا لِذلک فَأعَلِمْهُمْ ان الله قد قرض عَلَیْهمْ صَنقَةتُوَحَ ِن يانه ره على رابوم إن مم اغا الک فک وکرم الهم اني را الْمظُلُوْم فَإِنَة لَیْس ينها وبين َ الله حجَاب.(متفق علیة) ترجہ خضرت بن ا سے ردایت ہے بے لک رول اسل اما لم نے ما کوک نکی طر فبھیااورف مایا یک وم ا کاب کے پاش جات ہے ا ناوا با تک کوان یکی طرف بلاک الیل کے سواکوئی مہ وو یں اورخھ کی انل علیہ لم اہ کے رسول س۔ا ہیں ۔اگرانہوں نے ا یکو ما نلیا کیپ رد ےش ال تھا نے ان پردات اوردن می پ ما یفخ کی میں یسا رات یمم عو سن ے A‏ سی مکی جائے گرا کو مان زان کے ال سے خی ا ڈرتارا سس لے ےکا اس کےاورائیٹدتھالی کے ررم ان پزدہیں ہوتا۔( E ba‏ شس ایح : کن ان ع راس ا اس کلام پک یک زکو کی فرضی تکب ہوک ے؟ ران قول ےکیٹ زکو کی فرضی تل تی بن جو او راو نک ایی ل ٢م‏ پ ین منورہ یں مو اور دوسر! ول بے ہک رضت بھی۷ مھ میں ری رہ میس ہوئی اک عد یٹ می لآ کہ بال دارو ں کا یاد ہا چیا بال مت اواوردوس کی احادبیث می بال دارو اوم د یک مککٹیامال ندوتهکہنہمالدارو کا قصان مواور ترا کا متو ریا اموا ل لئے ہی ہیں کہ نہ یت الما کا قان اور رصا حب ما لکا نقصان سوال :اس مد یٹ میں جوش راک کی سیل بیا نک کی ہےاس شوم ور کا کرک ہے پھر ت۹2 نمی فر ہواصو مکاح اس سے پیک تھا ا نک دک کیو کس کی؟ جواب :شار علیہ الملا مکی عا دت مھا کہ ہے س ےکہ جب وگوت ایی الاسلام شصور ہوا شیا دمن کے اتر نماز اور کو کے مان بے اکن اکر تے ہیں اور جب ارکا صب لکو یا نکر موت تما ماشیا کو ذک رک تے ہیں( یہاں وکوت ای الالام کی تی بکامیان ے ) کیے انل پبرامرت ان اقاتل الناس شل ے۔فتو د علی فقرائھم بال ری مہ با تک پ کسی اب رعلی روآ لوم نے اقا مکی زکو 7 یں

کے قرا وو ےکا اگ مایا ہے بیان افضلیت کے لئ ہے اور وجب کےکیس ہے ور ایک شرل زک 8 دوسرکی جرد بنا بھی جاتڑے۔

َعیْ اَی هُربرَ ال ال رَسُولَ الله صلی ال لَب وَسَلّمَ ان صاب َب ولا فِصَة ا دی مها حَفها إلا اذا گان َم ية صُقَحْت لَه ضفابع مِ نار حى عَلَيْهَا فی تار جهنم قيکویٰ بها جنه وجنه وَكَھْرٰۂ عُلَمَا رُڈث اعِيْدٺ لَه فِی يوم گان مِفدارۂ حَمُصِنَ الف سَنةٍ حتی یی بين الاد یری سَبیله ما إِلی الْجنّة وما إلى التار قبل ا رَسوْلَ الله الال قال وا صَاجبٔ ابل لا ودی نها حَقََا وَنْ حَفَها عَلبّهَ وم ورا ا إا ان یلم اقيَة بُطع لها بقاع فور أو رمَا كانت لا يق نها قَصِيّا وَاجڈا تَطَأ باخفافها وَتعضۂ اوها کُلمَا مر علیہ لها رڈ عليه أرما فی یَوْم گان مِفدارۂ حَمِْيْ اَل سَنةٍ حت بُقُضی بین الَا یری سَبیله اما ّى الجن وَإِما إلى الثار قبل يا َسُوْل اللو َر الم ال لا ضَاجبُ بر ولا عنم لا ودی مها حَفَها إلا ا كان يوم اقيم بُطع لها بقاع فرفر لا يقد مها سينا لیْس فيُها عَفَصَاء وَل جَلْحَاءُ رلا عَصْباءُ تطح بفُروبهاوتطاة باظلافها كلما مر عليه الها رد عليه حرا فی يوم کان مِفدَارۂ حمسن آلف سَنَة حن بفضی بی الاد قَیرٰی سَيلَ ما لی اْجَنة وما إلی الا لا سول الله اليل قال فالْعَیْل َل هی لجل وڙ وه لِرَجُلٍ سر وی لرَجُلٍ َجْر َم

و اروف رو کے کسر وک تی کے | ر کے ے کو و الى هی لَه وَزْرْ فرَجُل رَبَطها راء وفخرًا وَبَوَاءَ على اهَل الاسّلام فهى له ور واما التى ع۔ ر لی کے ہو لہ کر و و اق نے ھ ا و ہر ۔ ك + ۶د ہس ئصً J~ fe ٤‏ "هی له تر فرَجُل رَبَطها فى سَبیْلِ الله ثم لم يسس حَق الله فى ظهُوْرِمَا ولا رِقابهَا فھی له : تی ۔> 2:8 ےر کھ N ADT‏ وا ھ 00 شی و ےت e r‏ ستر وما ای هى له اجر فرَجُْل رُبَطهَا فى سَبيْلِ الله لاهُلِ الاسّلام فى مرج ورَوْضة فما كلت مِنْ ڈاِلک الْمَر ج اَوالرُوُضة مِنْ شىء إلا كيب لَه عد مَااَكَلّٹ حَسَنَات وكيب ه د الها لها عَسنَاث ولا َم واشت َر ا رين كنب الله لَه عَدد ارما وَاَرْوّاثها حَسَنَاتِ ولا مر بها صَاحِبْهًا على تهر فَشَرِبَت مِنْه ولا يريد ان سیه إا كب الله له عة ما َرَت عَسَنَاتِ یل یا رَسُولَ اللو فَالحمر قال ما أل عَلَیّ فی الْحْمُرٍ شَیٔی لا ذو الاي الاه الْجَامعَة فَمَنْ يْمَلْ منفال ذَرَةٍ عَیْرا رَه وَمَنْ ور 98 2 ک ضس يعمل مثقال ذرۃ شرا يره. (مسلم) ھجم ححضرت ال ہریڈ سے روات ے کہ اک رسول انیس ای علیہ لم نے راکو سوا اوج نک ر کے وا لی کرای سے ان کان ادا نکر ےگرجس وقت ت مت کا درن ہوگا ا سکیل ہآ ککینختیاں بنائی ہا ںکی جن مک ینگ می کر مکی جا یں کی اورا کے پل پشائی اورا یک بک دا دیا جا ۓگا۔ جب چا کے جا ہیں کے وائیل لا سے جا میں کے ایی ایی ون می جن سکااندازہ

تاب الکو 3 r‏ ۱ ۱ جلاىم

سسچسچےچسسچ مت سس مہسشےس-سسس-سس-سسہ کہ

پیا ہرارسای ہے یہا ںک کک نول کے درمیان فی ہکیاجاۓ روہ اپٹی راہ دیکھےگا جن تک طرف یادوز خغ کی طرف کیاکی

اےالل کے ول اودونٹکاعم ربا کک وو کا یں جوان سےا کات وکر اورا کان میں یھی ےک

لی پلانے کے دن دودح دوہ نکر وقت قیاصتکادن ہوگا ایک جھوارمیدران می اوناں کے ما ککومت کے مل الا ہا ۓگا۔

اک عالت شی اونٹ کے ےکوی یکم پان نہ پا ۓگا ا لاپ پاڈول یں کے اوراپے د نول ےکا س کے جب ایر

پل اح تگز ر ےک ھی جماعت وپ لا جا ےگا ایک اہی یدن ج کی مقدار پیا رسال سے الک کک ینروں

کےدرمیان فصل کیا ہا ۓگا روہ اپناراستہ وک ےک جن یک طرف اروز گیطرف کہا کیا اے الد کے رسو لگا کُوں اوریگروں

کے تھا کیام ہےفر مایا اود کوئی کا میوں او ریک یو نکا ما کک جوا نکی کو3 انی سکرتا جس وقت تیاس کا دن ہوگا ایک چموار

میړران شل ڈالا ہا ےک ای رس یلوم نہ با ےگا ان لکوئی ایک نہ موی جن کے سبینگ مڑے ہوں اور تہ من کی اور دنگ

وی ا سکواپ نے بنگوں ے مار یی گی ادداس ےکھروں کے اتی کی ںکی ہا یک کہ جب اس پ کی بتاع یک ر ےکی کی

اعت ڈالیل لال جا ےگا ایک ابیےدن اج نک ماپ پزارسا ل سے مھا لک فک ہندوں کے دزمان فم کہا ے۴

پچ رووا ی راہ ےگا یا جن تک طرف یدوز کاطر فکہاگیااے ال کے رسو لکھوڑو ںکاکیا ام ہےر ما اکھوڑ ے تین طرع کے

ںای ےآ و یکیل کنا وکا سبب ہدتے ہیں ای ےآ وی کیل پردواو رای کآ دی یلوا ب کاب کٹ ہوتے ہیں۔ وکھوڑے چو دی یکس

گنا کا سبب ٢و‏ کے ہیں وہ وڈ ے ہیں ج دی ان اود یا اور ر کے لور پرائل اسسلا مکی وشن کیلے ب تتا سے یو ےا کیل کنا رکا

اعت یں ادرو کھوڈ س ےکسا کیل ردہ ہیں دوکھوڑ ےجس نے ا نکود کی راوس باندھاے را نکی ڈو ں اورا کیگر ول

یس ددال کات نی ںبھولا یں یا ا ا سے کا تی وکھوڑے ہیں جوا نے چا گاواور

ہیر سے میس اولدکی راو یں ائل اسلا مکیلع ا تہ سے ہیں وہای چ اکا اورہ یتر ے کوئی جن سکھا ےکر کیل یی ر کی ہا

یں ۔ بفدراس یز کے جواس نےکھائی اراک لی اورا کے پا بک مقت دار طاق ا س کے ییا ی ہا ہیں وہکھوڑے ہے

اس ےلاڈ کے پچ ایک میران یا دومییران دوڈ تے چ ں کاٹ تیا ان تش تر میق اورا نک لیراورپیشاب ےطان

ٹیا ںککھتا ہے ادرا کاب کک ا نک رر پک لگ ارتا ںا سے چو میں ادرو دا نکا لی پلا ٹس چا تا اتی ا کیلع اس

2 گی کے مطا ان جو پیا میا ںلھتا ےکی کیا اے ال کے رسو لگرعو ںکاکیا ام راب ڑوں تلق پجھ پرکوئ ہیں

220ھ ات باس کیو و کرنے دجن نے ید مار یکاہ وو ارش نے ذرہ

ک قرا کیا کو یھگ ہرد تک یا کوسلمنے۔

تشرایح: وعن ابی هريرة قال قال رسول الله صلی اللہ عليه وسلم وا انت ذهب ولافضة الخ: ال اغا ج ر ر اورا 0 ۷ / نرک رة ای نکر ےگا تیا مت کے دن ا سونے چا ند یکو ککینختیاں ایا جا ےگا گرا ن مک یآ گ می کرم کیا جا ۓےگا پرا قتوں

کے فا یچ سونے چا خدکی کے ما کک کے اخضا ءملاشے پیا پہلواور پش تکوداغطا جا ۓےگا۔ باقی ان اعضا شل ھک تی سک وج یہ کے ' اشرف الاعضاء ہیں جب ان کابیعال ے7 تو ںکو بط لن اوی عذاب بوگا۔ دوس ری وج جب سال نے کو این ما لن کک انی رٹل پڑ گے زکو ج لین وا نے کے1 نے با ول احضا ا پڑتا ہے۔ جب زکو اگ ذابتقرام پان یل پچ اص را کیان پہلو چی رلیااوراصرار کات پت پھیرکی۔اس لی ا نکی کروی ور واھ ازم وزیی ۔لایودی منھا حقھا ا یل کلام پگ کمن ہا کی رکا مرش عکیاے پہلاول : اتی رکا مرقع فضہ ہے اور حب فی ہکا حال “علوم گیا تو صا حب تین کا حا بھی معلوم ہ وکیا یا اویل امو دوڈول ذ ہب فی تیب رک مرت ہیں ۔ یا ما کیرک مر مرف فضہ ہے او ہ بکواس تیا ںکرلو۔ تی ےآ تک یہ وا الذين يكنزون الذهب

ےت ےت PETE‏ 7277 دب ا و ین

کیہ اک تھی ( پد کی ہا ے لی بان لواو ںکا ما ب کناب ہاگ اور دز ب ہوگاچھرجب صا بکتا ب ہو جائے گا دیکھا ےک اکن کے ادرنا وو پا گر ہجام یں خی نت شش ۔فیری سہلة الک سیت د و واوا باج بد بک یں 4وک کا مض وھا ا ےک3 ای یں ادرمالہ پیداہدگیا۔ 2 ً قیل ی رسول الله فلابل: :قال وا لاصاحب ابل لایو دی مھا حقھا الخ ھا الع ا کو7 ضاماکی ےپ هن

0 اورا ےکی میا یت کیان سمال سکیا ےم کیاپاسول ا گرا کے پا اوت مون اودودا کی

ا کا کر ےکی زا ت ذسیے دالو نکی ریا نکر کے سے پیل ایک کیا ی کیان نالور

مر نے دای مزال پھر ب یں )وھ ےسک جب اون نکونھاٹ پیا ہا ے7 ان پٹ ربا وکود ےو ع ربکا ۱ ٰ حعادت یی یکنا کوزد اشن دنع ےمان پا جے ےد شس دان پل پا ا جاے اس دن ا نکا ددد نال جا ای چب ۰ ۰ مہ لک اون لک پل پان ےآ ےار رورس سادا تع ذجاتے تھے شاو یں ھی دود ل جا ےا ےرا وود الو الہ ۰ ۱

3 ان یگیل ہے الو زک وار دلىے دانےکمزاپیا نگ کہقیامت کے دن اونڑن کے کک لاوش ڑل کے سا ےپ لیران 1 ۱ میس ڈول دیاجانےگا(فا ٹیل میدان اور قرا سکیف تکالہ ہے )ورواو فک وکیا نچا کال ہیں گے۔د وا کو لو کے '. 5

ر سروت کی کے اورت کر ہی ےکا بیس گے یں تی ملل تا رگا کلما مر عليه اوٹھا رد عليه اخراها دال حدیث ئل 1 : ۱ ك ۱

: را یک طرف ہے لب نج کال کلما مر علیہ اخراھا رذعليہ اوٹھا “چان یرید درک راہ چا کے الفا

E 'کلما جازت اخراها 2 علیه اؤٹھا“اررا ارقل با ن چ ردوصورں ہی نبرا جب انژ نک ماع تاا 1 رچاۓگا‎ 2: a

و و زوس ر وع E‏ ی ری قارا ہے ودای دوپ اراتا جا گا شر ١‏ ا کزان ےک اش 0 ۱ ٦‏ ۱ عذاب داجا ےگا ا صخرت برای اک کی اود کچھ اپا کوٹ شا لئیں۔الفرش ا سکویی زاق گی خی ٠٠٠٠‏

ایقطٰی بین العباد فیوی لہ اما الي الجنہ واما ال النار اوران کے ےا یک دن ا :الک نج یک سے 5

ان کے لے رکیپ ںی ترتجا جا ےڈ اکم ساب ۱ 3 . .قیل یا وسول الله فالبقر وَألغیم قال و لاصاحب بقر ولاغدم لایودی منھا حقها الخ: ۴ بت" ج. . زلا ڑج ادا دا ے شی شی کاپان ہے تق ی ل دای سای رانک اواد شرکر نے وا نے f‏ بی عاب بوگا .پل ال ۰

طعیدالہ ورادا او 00927 کان کے ینک تچ سال ہوں کاو مز ہے ہے کون والی یں ہو اور یکو جتے

ا ۶5ھ I‏ کی اورینگون کے زر وار پک مار یگ

کپ سوال :1 آل حدیث سے ے پارتی مو مون ےک یکوکی ہے“ ییا ہکی اور ڈو نے ہے مون وال ہوگی نا مو

و وتاش اکرو ت بک یا ےر ن دای ہوگی کو زر سیر یکو ں اور( خر یگ وا یکو ) یو کی مال کیا ۱

۱ جاےگاحالکدوسرکی حدیث ٗیا ےک عالت ا موت وا ہگ ای عاتم ھا اےگا۔ ۱

جواب :او لا ای عالت پراٹھاا ہا ےگا بحر ال لکوسینگک د ےد جا یں گے جاک انی ط رح سے نا لیف فی یا رسو لاله فالنيل الخ اتا رائ ےگھوڈوں کان موا نکیا ٹ کر نے مرا اکھوڑو ںکی تین یں ہیں ا۔جوکھوڑے مالک ٠‏

۱ کے وز ر یں ٣ووک‏ ےجا 3 ہیں“ یا نیت ےکھوڑا پا ا اک بیس لوکوں ہےنوال نے بے چاو ابی عابتا 27 ا

- یھ پر کروں. جو ال کیل کاب ع ے۔ سلاو ںکی غ زم یکیل ایا کے می لن سی 5 یلاکشا لز ولاو سخ ال اکا زاوی ای لیا ال کی دزر ول ہم اھ وڑاضرورت, ۱

۱ ںو او کرد ہن مرک کا ا میں 7 کی متا ب تھا یسر ہے لم لم نس حق الله :فی ظھورھا ولا رقابھا۔] 77 TT‏ ای سک ھور ے مراد سواری ور رہ کیل اوقت رورت دوم ر ےاود ند یا ہے اود رقاب ےم اد ڑا و ےاوراں نام نف کل اللداورا انیت کس کے ار دجا ےاذرتیری 2 سن یل الہ سے مرا ارال ہے اورتسرا راکو ڑا جروالاوہ ے٠‏ لوا کے چادل یل ان کیج چازکیاہوو 2 کھوڑے کے پاد ہکھانے پک ابوڈ اب سے ےکا وفیر سوال :برا ےکتاب ںآ یانما الاعمال بالنیات اورا رٹ سے معلوم ہوا ےک اک بلاضی تج یگھوڑا پانی پا کےا اس کی ات واب لےگا۔ جواب: :جب امرگ یکی تی تک لا ج یات خود ود1 ہا یں کی ولا بقطع طول طول اس رق یکوکچے یں ام رھوڑے کے پنوس بواورایک مرا کے کے مہو قیل یا رسول الل فالحمر یکر ی ال علیہ دآلہ وم سے کاب ہکرام ن ےم( گڑھوں ) تاق سوا لک کی ایا تو حضو ری اللعلی رآ لمان کے بارے می کو موی وا زا جا ئآ یت کے فمن یعمل مٹقال ذرۃ الخ وَعَنه قال قال رَسوْلُ ال صلی اليه َسلممنْ اا اماه یو کرت ئل کل َوّمَ الْقَيلمَة مُجَاغَا اقرع لَه زَبیبتان طرف يوم القیمَة ميحد بلهرمَتيه يَغییٰ فِذقيه لم . رل نالک آا کلک ف ول خم الین تز ¿ الي زبخاری) ۱ ترجمہ: حر ال ڈیڈ سے ددایت س ےکہارسول ای ال علیہ کم نے فر ای ج۱ سکوا نے مال دیا سوا نے ا کیک تاوا کات ا کال ا کاپ متا ا ےگا جم سک یآمگھوں بویا قت ہوں کے اوردہ ساپ قا مت کے دنا یکی کرولن -. یسا لو رطق ڈالا جا ےکا ساپ ال کے منہ کے دفو ںکارو لاون چو ںکوپڑ ےک پچ رگا می تا ای ہوں شترا ٠.‏ اپول کر پ نے اتاد تڈرائ جاگ لکرقے گان کب آ فآ کک ۔ روا تکیاا اوخای نے ٠‏ تشر او : رعنه قال الخ سوال: عد یٹ شآ اگ نےپ+گ/آ کک قتاں مایا جا ےگا ادا ش٦‏ اک ساپ لوق ئن رجاگ جواب :کول تیش ہیں 77٦٤‏ ۶ھ , الض ]یوک زا ہوگ ول

آل ودرا جام اقرز ع نیا ساپ“ سن شرت ز ہرک ےا ال کے پا لگھٹڑچا ا

وَعَیْ اپ کن الي صلی اليه وَسَلم ال ما من جل ون له ايل أو قر ؤ عملا وی حَفها إلا ای بها يم اَِيمَة اعم ما حون وَاَسْمَنَةُ اه بأَحُفاْها وَتَطِحْۂ بِفُرُوْنها لما ڃجارٿ أُحْرمَا رٿ عََيهِ ولا ځتې تی فص ىبَيْنَ الناس. (متفق علیام . . ر جم جرت ابو ر ےردایت ےآپ اش یلم ےرا ی اھ کے پ اش گے 1 یں ورن ادا ۱ ٹی نک تارق کد وما حال می لال جا ۓےکہ یرت بک اور یہت مول موک وا کراپ پاؤں سے تچ گی اورا نے نے سینگ سے مار ےک جب یگ رجا ۓگ یآ خر لائی جا ۓگ یہ ںت کرک کے درمیان یمیا جا ےگا۔ ادات ٌ نے می ہروس کا اق ہے۔ ُ ۱ " وَعَنْ جَرِیْر بُن عَبْدِاللُ قال فان رَسُوْل الله و صلی الل عله E‏ ادا اک لَبِق '" يدر عَم وهو َنم راس رسلی ٠‏ سس میں ہہ کے

جار کر ٰ ۱ ۵ ` ۳ > لام

ےہا پارات ہراشا چا چ روا ت کیا سم نے۔ و الله بی ابی وف قال گان لنب صَلّی اللٴعَليْهِوَسَلَم اذا اه قوم بِصَدَفيهِمْقَالَ هم صَلٍ عَلی ال لان فاا یی بصقیہ قال اَلَهُمْ صل على ال اَن آؤفی مُتقَقعَلَيِ فی رِوَاَةٍَإِذا آنی الرّجْل ابی صلی الل عَلَيْه عليه وَسَلَمَ بضتقیہ قال الم صَلٍ عَلَي. چھمہ: حر ت کاٹ من ای اڈ سے دوایت ےکہا اکس وق ت کو توم وی ال علی ڑل کے پاس ایی زک 3لاکی ‏ آپ صلی اشا یف ات الال پر یج مرا 02017 یلم کے پاس اپ زک ۃیآ پس علیہ لے ر را ای اواو ررمت تاج ا سکوبخاری کت رت گیا اورا ایک ردایت میس ہے یس ونت یل ال لی نلم ے پا یٹس ای رک وج آ پ کچ ی ای فلاں پدق تی ۔ نس فففُسرابیخعوعن عبدالله بن ابی اوفی الخ الم صل علی فلان الخ ۔اس کے تت سیل پاک کلام الم صل علی فلان ( ن وما ےلو بصی خا طب )وک غ فی ب جاک ے بای دا تول بر ےکتصی دک کف ری تتلا جائزنیں تباجا ڑے۔ سوال ای حدیث مار یسل کاذکرے؟جواب متام کیا در صاح با یا کےا ی۔ وَعَنْ ا ئ رة قال قك رثول الله صلی الٴعَليهوَسلَمَعُمر عَلی الصّدقة فقيل مع ُن می وَعَالِد بن رَد د وَالْعبَاسُ فَقَالَ زول الله صَلَی الله عَلَيْه ۾ وَسَلَم مَا يقم این ا‫ جَمِیْلٍ 1 آنه کان فَقِیْرا فَاعنَا الله وَرَسْرَلهُ راما َال َِنكُم تظْلِمُوْنَ خالِٰذًا قد اتسس در وأغتد في سي الله وا اباس هى علی ويها هام قال يا غُمَرُامَا شْعَرّتُ اَن عَم الرّجْلِ صنو ابی (معفق عليه تر جج : رت الد ہریڈ سے رایت کہ اک رسول انڈیصلی او علی یلم نے مرکو زکو ةوصو ل کر ےیل کہا 7 خالد نوی اورا نے زکو نیس ریب رسول ای اش زلم نے فر مایا تیل خد اک لق کارا کیا ےک وہ فقیرتھا ا ے اوقدتھا لی اوراس کے رسول ےک کہ دیا سے لان خالدسوقم اس مک کے مو تیا اس نے ابی زر ہیں اورسا مات جنگ خد اک راہ س وق کروی کر ع ات اسک زکو تاوا کش مر سے ہے رر مایا ا ےکر یں جا ا لآ دیک پت ا کے با پیا ہے ۔ا یفارگ سلم نے لکیاے۔ تشر ايچ : ال ماگل عدب کا ےک یکر حطر ت راو زک کی وصو یکیلے یہ انہوں ے۲ r‏ تنآ ذمیوں نے زکو م یں دی۔ائ نل ال بن الول راورعپا ی نے ۔ نیک ریم نے فرمای ا کہ یہاءکن کیل متاقق خر تان پا ایی تھا اوشم کا مال تار ہام سک وچ ہے بنا وگیااوداس نے زک انی دی مطلب ےس ےک اس کے پا وگ مان شی ٹنیس بخ رک مزر کےا نے کو نیس دی۔ بان خالدبن ولید۔اس نے تذاپناسارامال جا کے وف کر رکھا سے اور جو ال وتف موتا سے اس می زکو یں مون ۔ ئ یکرم کے رما نک ل یی عال کرای نے سادامال وق کر دیا وای پر زکرۃ کے ہوگی اس سے معلوم ہو اک تقولا کا وق بھی جاک سے ادرف یھی ای بے ہے۔ یمام مرکا قول ےن اس کے عرم جواز کے ال ہیں ہیں۔عباس نے زک ڈنکیس دک ان کے باد سے یی رمایا عا نکی جاب ےڈ ئل رکو میرےذے ہے۔اس کے دومطلب ہیں ا جحضورنے نے عم یں سے دوسال کی رکو ووصول لیا لئ انہوں نکیل دی ٢‏ عا لے ضور سی اشع دن لم ےووسا لی ہلت

کاب الکو ۱ ا کک جرسم

وع ابی حم السَاعِدِیٌّ قال عمل ابی صلی اللعَلَیه وَسَلم رَجلامِنَ الد َال ا

دو قد یں ہے 27 0 ر ي ووا 21 é‏ و

ابن اللتبیْة على الصْدَقة فَلمُا قم قال هذا كم وَهٰذًا اهُدِی لِیٗ فخطب النبیٔ صلى اللہ

عليه وَسَلَمْ فَحَة الله وَاتُٰی عَليه تم قال اما بعد انى اَسْتعْمل رجالا منكم لی امور

ِا ولا نی الله قيابیاَعَدهُم فقول هدا كم لاہ هَيِيةأَهُِيَت لِیٗ هاا جَلسَ فى َیّن _

یه وبي امه بطر دی لَه ام لا اَی تفس بيده لا اح اح مه َا لا جَاءَ ہہ

م اة خی لی رقن إن کان راه راء ابقر له عُواز ؤا تر م رقع

به تی راتا عُفرَةَ ابيد کم قال اللَهُمْ هَل بل اَللَهُمُ هَل بلَفُتُ رمعفق علیم قَالَ

ابی وی قله لا جَلَسَ فی بَیّتِ اي اه دی یه ام ل دیل على ان كَل

و وت و 0+ E‏ اوو وور 2 شرو و رھ

مر يَرُع به إلى مَحْظوْرِ هو مَحظور وکل دجيل فی الْعقُودِ ْظرْهَلُ يَگُوْنْ حُکُمُه“ عند اانْفرَادِ کُحُْکہہ عَنَدَالاقيرَانَ آم لا ھگذا فی شرح لق ۱ ےھ

رع ححضرتااویرہا عر ےرات ےکی انی سی ال علیہ یلم ای کےا ویلوی ل( کصیلرار) مقر رک سل

ا نات کہاجا تا تھا انل نے رکو چ وسو لکنا گی _ جب بیصاحب وای یلو ےو سکینے گ کے ہا رامال ہے اور ے کت ی کی کیا

ےل آپ کی اللرعلیہ ریلم نے خطبرارشادفر مایا دشا کے بحدآپ کی علیہ کم نے ف ایا تمہار ےکی لوکوں کے ا کا ول ر

مقررکرت ہہوں کن راتا نے بے حا ۸ قر کیا ے ادا نکا ای کفآ د1 رکا کے ما لتھہارا ہے اور ےک ے جو